Halqa’a e Be TalabaaN runj e GiraaN Bari Kya.//حلقۂ بے طلباں رنجِ گراں باری کیا

حلقۂ بے طلباں رنجِ گراں باری کیا اُٹھ کے چلنا ہی تو ہے کوچ کی تیاری کیا Halqa’a e Be TalabaaN runj e GiraaN Bari Kya Utth k Chalna Hi to Hai, Kooch ki Taiyaari Kya ایک کوشش کہ تعلق کوئی باقی رہ جائے سو تری چارہ گری کیا مری بیماری کیا Ek Koshish k … More Halqa’a e Be TalabaaN runj e GiraaN Bari Kya.//حلقۂ بے طلباں رنجِ گراں باری کیا

Yeh Kasak Dil ki Dil mein chubhi rah gayi/یہ کسک دل کی دل میں چبھی رہ گئی 

یہ کسک دل کی دل میں چبھی رہ گئی زندگی میں تمہاری کمی رہ گئی Yeh Kasak Dil ki Dil mein chubhi rah gayi Zindagi mein Tumhari kami rah gayi ایک میں ایک تم ایک دیوار تھی زندگی آدھی آدھی بٹی رہ گئی Ek main , Ek Tum , Ek Diwakar thi Zindagi Aadhi , … More Yeh Kasak Dil ki Dil mein chubhi rah gayi/یہ کسک دل کی دل میں چبھی رہ گئی 

ہم گھوم چکے بستے بن میں/ Hum Ghoom Chuke Basti Bun Mein

ہم گُھوم چکے بَستی بَن میں اِک آس کی پھانس لیے مَن میں کوئی ساجن ہو، کوئی پیارا ہو کوئی دیپک ہو، کوئی تارا ہو جب جیون رات اندھیری ہو اِک بار کہو تم میری ہو جب ساون بادل چھائے ہوں جب پھاگن پُول کِھلائے ہوں جب چندا رُوپ لُٹا تا ہو جب سُورج دُھوپ … More ہم گھوم چکے بستے بن میں/ Hum Ghoom Chuke Basti Bun Mein

کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے

کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے جتنی بھی مشکل میں ہوں آسان کر دے گا مجھے روبرو کر کے کبھی اپنے مہکتے سرخ ہونٹ ایک دو پل کے لیے گلدان کر دے گا مجھے روح پھونکے گا محبت کی مرے پیکر میں وہ پھر وہ اپنے سامنے بے جان کر دے … More کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے

Ras Mein Dooba Huaa, Lahraya Badan, Kya Kahna- رس میں ڈوبا ہوا لہرایا بدن ———— کیا کہنا

رس  میں  ڈوبا  ہوا لہرایا بدن ———— کیا  کہنا  کروٹیں لیتی ہوئی صبحِ چمن ————- کیا کہنا باغِ جنت پہ گھٹا ———- جیسے برس کر کھل جائے  یہ  سہانی  تری خوشبوئے بدن ———— کیا کہنا روپ سنگیت نے  دھارا ہے ——— بدن کا یہ رچاؤ تجھ پہ لہلوٹ ہے بے ساختہ پن ——— کیا کہنا  … More Ras Mein Dooba Huaa, Lahraya Badan, Kya Kahna- رس میں ڈوبا ہوا لہرایا بدن ———— کیا کہنا

غمِ جہاں کو شرمسار کرنے والے کیا ھُوئے؟

غمِ جہاں کو شرمسار کرنے والے کیا ھُوئے؟ وہ ساری عمر انتظار کرنے والے کیا ھُوئے؟ بہم ھوئے بغیر جو گذر گئیں ، وہ ساعتیں وہ ایک ایک پل شمار کرنے والے کیا ھُوئے؟ دُعائے نیم شب کی رسم کیسے ختم ھو گئی ؟ وہ حرفِ جاں پہ اعتبار کرنے والے کیا ھُوئے؟ کہاں ھیں … More غمِ جہاں کو شرمسار کرنے والے کیا ھُوئے؟

خبر نہیں بے حصار تھا میں کہاں کہاں پر

خبر نہیں بے حصار تھا میں کہاں کہاں پر سو ڈھونڈھتا ہوں وجود اپنا یہاں وہاں پر بہت سلیقے سے زندگی کو گزارنے میں بکھر گئی میری سانس آخر بساط جاں پر بڑی اذیت ہے سوچنا عہد بے حسی میں ہزار صدیوں کا بوجھ ہے ذہن ناتواں پر ثقافتوں کا طلسم ٹوٹا تو سوچتا ہوں … More خبر نہیں بے حصار تھا میں کہاں کہاں پر