For The Binjoy River/”بنجوۓ” ندی کے نام

“بنجوۓ” ندی کے نام ندی!! میں تیرے پلیۓ پر کھڑا ہوں یہاں سے دور گاتی لہروں کو نہ جانے کب سے میں گننے کی کوشش کر رہا ہوں چٹانیں ہر طرف بکھری پڑی ہیں ترا بے لوث اور شفاف پانی ان چٹانوں سے لپٹتا ہے گلے ملتا ہے کچھ چھینٹے اڑاتا ہے مجھے یہ چھیڑخانی … More For The Binjoy River/”بنجوۓ” ندی کے نام

کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے

کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے جتنی بھی مشکل میں ہوں آسان کر دے گا مجھے روبرو کر کے کبھی اپنے مہکتے سرخ ہونٹ ایک دو پل کے لیے گلدان کر دے گا مجھے روح پھونکے گا محبت کی مرے پیکر میں وہ پھر وہ اپنے سامنے بے جان کر دے … More کب وہ ظاہر ہوگا اور حیران کر دے گا مجھے

جب ترا حکم ملا ترک محبّت کر دی

جب ترا حکم ملا ترک محبّت کر دی دل مگر اس پہ دھڑکا کہ قیامت کر دی تجھ سے کس طرح میں اظہار محبّت کرتا لفظ سوجھا تو معانی نے بغاوت کر دی میں تو سمجھا تھا کہ لوٹ اآتے ہیں جانے والے تو نے جا کر تو جدائی مری قسمت کر دی مجھ کو … More جب ترا حکم ملا ترک محبّت کر دی