Utha Leta Hai Apni AeriyaN…/….اٹھا لیتا ہے اپنی ایڑیاں….

اٹھا لیتا ہے اپنی ایڑیاں جب ساتھ چلتا ہے

وہ بونا کس قدر میرے قد و قامت سے جلتا ہے

کبھی اپنے وسائل سے نہ بڑھ کر خواہشیں پا لوں

وہ پودا ٹوٹ جاتا ہے جو لا محدود پھلتا ہے

مسافت میں نہیں حاجت اسے چھتنار پیڑوں کی

بیاباں کی دہکتی گود میں جو شخص پلتا ہے

میں اپنے بچپنے میں چھو نہ پایا جن کھلونوں کو

انہی کے واسطے اب میرا بیٹا بھی مچلتا ہے

مری مجبوریاں دیکھو اسے بھی معتبر سمجھوں

جو ہر تقریر میں اپنا لب و لہجہ بدلتا ہے

بدن کے ساتھ میری روح بھی سپراؔ کتھک ناچے

غزل سانچے میں جب کوئی نیا مضمون ڈھلتا ہے

تنویر سپرا


Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s