Betey Ko Saza De Ke Ajab Haal Hua HAi/بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

دل پہروں مرا کرب کے دوزخ میں جلا ہے

عورت کو سمجھتا تھا جو مردوں کا کھلونا

اس شخص کو داماد بھی ویسا ہی ملا ہے

ہر اہل ہوس جیب میں بھر لایا ہے پتھر

ہمسائے کی بیری پہ ابھی بور پڑا ہے

اب تک مرے اعصاب پہ محنت ہے مسلط

اب تک مرے کانوں میں مشینوں کی صدا ہے

اے رات مجھے ماں کی طرح گود میں لے لے

دن بھر کی مشقت سے بدن ٹوٹ رہا ہے

شاید میں غلط دور میں اترا ہوں زمیں پر

ہر شخص تحیر سے مجھے دیکھ رہا ہے

تنویر سپرا


4 thoughts on “Betey Ko Saza De Ke Ajab Haal Hua HAi/بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s